بنیادی صفحہ / سعودی عرب / آج کے کالمز / بھارت کے بعد پاکستان میں بھی کورونا مریضوں میں ‘مہلک بلیک فنگس’ کی تشخیص کا انکشاف

بھارت کے بعد پاکستان میں بھی کورونا مریضوں میں ‘مہلک بلیک فنگس’ کی تشخیص کا انکشاف

کراچی : پاکستان میں کورونا مریضوں میں مہلک بلیک فنگس کی تشخیص کا انکشاف ہوا، جس کے بعد اس فنگس سے اب تک چار افراد جاں بحق ہوچکے ہیں ، یہ فنگس دماغ اور پھیپھڑوں پر اثر انداز ہوتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان میں کورونا مریضوں میں مہلک بلیک فنگس پائے جانے کا انکشاف سامنے آیا ، ملک بھر میں بلیک فنگس سے 4 کورونا مریضوں کا انتقال ہو گیا جبکہ متعدد کیسز رپورٹ ہوئے ہیں، کراچی کے تین اسپتالوں میں ایسے کیسز سامنے آئے ہیں۔

دوسری جانب ماہرین کاکہنا ہے کہ متعدد سینٹرزکی جانب سے بلیک فنگس کے یہ کیسز رپورٹ نہیں کیے گئے کیونکہ مریضوں میں اس مہلک فنگس انفکیشن کی تشخیص مشکل سے ہوتی ہے۔

متعدی امراض کے ماہرین نے کہا ہے کہ بلیک فنگس دماغ اور پھیپھڑوں پر اثر انداز ہوتا ہے، یہ وہی فنگس ہے جو روٹیوں میں لگتا ہے ، فنگس کی علامات میں آنکھوں اور ناک کے ارگرد تکلیف اور سرخی، سانس لینے میں مشکلات، خون کی الٹی اور ذہنی حالت میں تبدیلیاں قابل ذکر ہیں۔

ماہرین کے مطابق کرونا سے صحت یاب ہونے والے مریضوں میں میکورمائکوسس نامی بیماری نمودار ہونے کے واقعات بہت تیزی بڑھ رہے ہیں، اس بیماری میں عموماً مریضوں کے پھیپھڑے، سائنیس، آنکھیں، جبڑے یا ناک کی ہڈی متاثر ہوتی ہے۔

اگر آنکھوں میں انفیکشن ہوجائے اس بیماری کی وجہ سے لوگوں کی بینائی ختم ہوجاتی ہے جبکہ یہ انفیکشن دماغ میں پھیل سکتا ہے ، جس سے دوروں ، کوما جیسی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

خیال رہے بھارت میں کورونا وائرس کےمریضوں میں بلیک فنگس عام ہونےلگا مہارشٹرامیں 2 ہزار سےزیادہ کورونا مریضوں میں بلیک فنگس پایا گیا، انڈین کونسل آف میڈیکل ریسرچ (آئی سی ایم آر) نے کورونا مریضوں میں میوکورمائیکوسس (Mucormycosis) نامی اس بیماری کا انکشاف کیا ، جو بلیگ فنگس انفیکشن کے نام سے بھی جانا جاتا ہے یہ نتھنوں یا پھیپھڑوں کو نقصان پہنچا سکتی ہے۔

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*