بنیادی صفحہ / اہم خبریں / جب مِس عراق اور مِس اسرائیل نے اکٹھے سیلفی لی

جب مِس عراق اور مِس اسرائیل نے اکٹھے سیلفی لی


لاس ویگس میں مس یونیورس 2017 کی تقریب میں امیدواروں کا اکٹھے ہو کر تصویریں بنوانا حیرت انگیز عمل نہیں تھا لیکن مس عراق اور مس اسرائیل کی سیلفی پر سوشل میڈیا پر خاصا ردعمل دیکھنے کو ملا۔
مس عراق سارہ عدن اور مس اسرائیل عدر گینڈلزمین نے جب اپنی سیلفی کو شیئر کیا تو اس پر سوشل میڈیا صارفین نے ملے جلے ردعمل کا اظہار کیا۔
مس اسرائیل نے اسی تصویر کو اپنے انسٹاگرام اکاؤنٹ پر شیئر کیا اور مس عراق کو ’لاجواب‘ کہہ کر پکارا۔
ان کی پوسٹ کو تقریباً تین ہزار افراد نے پسند کیا۔
اسرائیلیوں سے ملاقاتوں پر تنازع، پریتی پٹیل مستعفی
اس سیلفی سے چند سعودیوں کو نفرت کیوں؟
اگرچہ مس گینڈلزمین کے فیس بک پیج پر انھوں نے مقابلے میں شریک دیگر ساتھیوں کی تصاویر بھی شیئر کی ہیں تاہم مِس عراق کے ساتھ ان کی تصویر نے لوگوں کے دل اور اعصاب کو یکساں طور پر چھوا ہے۔
مس عراق جو پلی بڑھی تو عراق میں ہی تھیں لیکن پھر موسیقی کی تعلیم حاصل کرنے کے لیے امریکہ منتقل ہوئیں کے بارے میں فیس بک اکاؤنٹ پر مس اسرائیل نے لکھا کہ وہ پہلی خاتون ہیں جنھیں گذشتہ 45 سال میں اس مقابلے میں اپنے ملک کی ترجمانی کرنے کا اعزاز حاصل ہوا۔
خیال رہے کہ اسرائیل اورعراق کے درمیان سفارتی تعلقات نہیں ہیں۔
اسی کا اشارہ سوشل میڈیا پر کچھ صارفین نے بھی کیا جن میں یوٹیوب پر سبرینا بینوئی نے لکھا کہ ‘یہ ہر ایک کے پسند کے مطابق نہیں ہے‘

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*