بنیادی صفحہ / سعودی عرب / آج کے کالمز / بڑی پیش رفت، امریکی کمپنی نے پاکستان کو کرونا کی مؤثر دوا بنانے کی اجازت دے دی

بڑی پیش رفت، امریکی کمپنی نے پاکستان کو کرونا کی مؤثر دوا بنانے کی اجازت دے دی

اسلام آباد: کرونا وائرس کے مریضوں کے لیے بڑی پیش رفت سامنے آئی ہے، امریکی کمپنی نے پاکستان کو کرونا وائرس کی مؤثر دوا بنانے کی اجازت دے دی۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق کرونا وائرس کے علاج کے لیے ایک اینٹی وائرل دوا ریمڈیسیور کو مؤثر قرار دیا گیا ہے، یہ دوا بنانے والی کمپنی نے پاکستان کو بھی دوا تیار کرنے کی اجازت دے دی۔

اس سلسلے میں آج معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا نے نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) میں بریفنگ میں بتایا کہ امریکی کمپنی گِلی یَڈ نے پاکستان کو اینٹی وائرل دوا ریمڈیسیور بنانے کی اجازت دے دی ہے، یہ دوا اب پاکستان میں بی ایف بائیو سائنسز تیار کرے گی۔

انھوں نے کہا کہ پہلے یہ دوائی امریکا میں کمپنی جی ایس آئی تیار کرتی تھی، دنیا میں 2 ممالک کو یہ دوا بنانے کی اجازت ہے، پاکستان ان میں سر فہرست ہے، گِلی یڈ نے جنوبی ایشیا کے 5 مینوفیکچررز سے معاہدہ کیا ہے، لوکل مینوفیکچرر بی ایف بائیو سائنسز لمیٹڈ نے بھی گِلی یڈ سے اس سلسلے میں معاہدہ کر لیا ہے۔

پاکستان میں کرونا کیسز کی تعداد 37 ہزار 218 ہو گئی، 803 جاں بحق

ظفر مرزا نے بتایا کہ امریکی ادارے ایف ڈی اے نے تجرباتی بنیاد پر دوا کے استعمال کی اجازت دی تھی، 8 مئی کو جاپانی حکام نے بھی اس دوائی کی منظوری دی تھی، ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کی منظوری کے بعد یہ دوا پاکستان میں بننا شروع ہوگی، اس سلسلے میں ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی ترجیحی بنیادوں پر دوا بنانے کی اجازت دے گی۔

انھوں نے کہا کہ حکومت پاکستان گِلی یڈ سائنسز کے لائسنسنگ کے اہم اقدام کی تعریف کرتی ہے، پاکستانی ادارہ معاہدے کے تحت 127 ممالک کو یہ دوا فراہم کرے گا۔ پاکستان میں منظوری کے بعد 6 سے 8 ہفتوں میں اس کی تیاری شروع ہو جائے گی، اور یہ دوا ٹیکے کی صورت میں ہے۔

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*