94

اورنج لائن ٹرین منصوبہ224 ارب سے340 ارب تک پہنچ گیا، منصوبے میں تاخیرپر یومیہ 6 کروڑ 90 لاکھ کا جرمانہ ادا کرنا پڑتا ہے،234 روز تاخیر کا جرمانہ 15 ارب تک ہوگیا ہے۔ ذرائع محکمہ خزانہ پنجاب

ملک میں ڈالر کی قدر میں بے تحاشا اضافے کے بعد اورنج لائن ٹرین منصوبے کی لاگت بڑھ گئی ہے، اورنج لائن ٹرین منصوبہ 340ارب تک پہنچ گیا، منصوبے میں تاخیر سے یومیہ 6 کروڑ 90 لاکھ کا جرمانہ ادا کرنا پڑتا ہے،234روز تاخیر کا جرمانہ 15ارب تک ہوگیا ہے . میڈیا رپورٹس کے مطابق ذرائع محکمہ خزانہ پنجاب کا کہنا ہے کہ ڈالر بڑھنے سے اورنج لائن ٹرین منصوبہ بھی مہنگا ہوگیا .
بتایا گیا ہے کہ اورنج لائن ٹرین منصوبے کی لاگت 340ارب تک پہنچ گئی ہے . منصوبے میں تاخیر کے باعث یومیہ 6 کروڑ 90لاکھ روپے جرمانہ ادا کرتا پڑتا ہے . جس کے تحت 234 روز تاخیر کا جرمانہ 15ارب ہوگیا ہے . ذرائع محکمہ خزانہ پنجاب نے بتایا کہ 2018ء میں اورنج لائن ٹرین منصوبے کی لاگت ایک کھرب 60 کروڑ 60لاکھ تھی . یکن اب تاخیر اور ڈالر بڑھنے سے اورنج لائن منصوبے کی لاگت 340 ارب تک پہنچ گئی ہے . واضح رہے ملکی کرنسی مارکیٹوں میں امریکی ڈالر کے مقابلے میں پاکستانی روپے کی بے قدری کا تسلسل جاری ہے . گزشتہ 2 روز میں ڈالر کی قدر میں 7روپے اضافہ ہوا . جس سے ڈالرکی قیمت 151روپے کی نئی بلندترین سطح پر پہنچ گئی . ماہرین کے مطابق آئی ایم ایف سے ڈیل کے تحت روپے کو مزید بے قدر کیا جارہا ہے، جس سے نہ صرف روپے میں بیرونی قرضوں کی مالیت میں اضافہ ہوگا، بلکہ مہنگائی بھی بڑھے گی . ماہرین کے مطابق آئی ایم ایف سے کئے گئے معاہدے کے تحت پاکستان کو روپے کی قدر میں 20 فیصد تک کمی کرنا ہے . اسی صورت حال کو دیکھتے ہوئے ڈالر کی خریداری کے رجحان میں اضافہ دیکھا جارہا ہے . ڈالر بڑھنے کے ساتھ اوگرا نے گیس کی قیمتوں میں بھی 45 فیصد اضافہ کردیا ہے .

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں