112

اٹارنی جنرل آفس کے ملازم نے سندھ ہائیکورٹ کی عمارت سے کود کر خودکشی کرلی

سندھ ہائی کورٹ کی چوتھی منزل سے اٹارنی جنرل آفس کے ملازم نے چھلانگ لگاکر خودکشی کرلی، پولیس نے تحقیقات شروع کردیں۔

سندھ ہائیکورٹ کی چوتھی منزل سے اٹارنی جنرل آفس کے ملازم آصف خان نے کود کر جان دے دی تاہم آصف خان نے خودکشی کیوں کی ؟ افسران کا دباو یا گھریلو مسائل ؟ آصف کی خودکشی معمہ بن گئی ۔

مرنے سے کچھ دیر قبل ہی اپنے بیٹے کو رقم موبائل فون اور دیگر سامان دیکراپری منزل پر گیا تھا والد کو اس حال میں دیکھ کر بیٹا غم سے نڈھال ہوگیا۔

اٹارنی جنرل انور منصور کا کہنا ہے کہ آصف ایماندار خوش مزاج شخص تھا، آصف خان 27 سالوں سے سندھ ہائیکورٹ میں ملازمت کررہا تھا۔

انہوں نے بتایا کہ اس کے معاشی حالت بھی اچھے تھے سرکاری ملازمت کے بعد وہ اپنا بھائی کے ساتھ گلشن اقبال میں پکوان سینٹر چلاتا تھا، متوفی کی دوبیٹیاں اور ایک بیٹا ہے ۔

پولیس کا کہنا ہے کہ لواحقین ، ساتھی ملازمین اور سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے تفتیش کررہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں