بنیادی صفحہ / اہم خبریں / نوازشریف نے اپنے کاروباری مفادات کو کشمیر اور قومی مفاد پر ترجیح دی: عمران

نوازشریف نے اپنے کاروباری مفادات کو کشمیر اور قومی مفاد پر ترجیح دی: عمران

چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہےکہ نوازشریف نے اپنے کاروباری مفادات کو مسئلہ کشمیر اور قومی مفاد دونوں پر ترجیح دی۔

عمران خان نے سری نگر کے جریدے ’کشمیر نریٹر‘ کو دیئے گئے انٹرویو میں کہا کہ بندوق کی نوک پر امن اور خوشگوار تعلقات ممکن نہیں، مودی سرکار بزور قوت اہل کشمیر کے حقوق غصب کرتی اور کشمیر میں انسانی حقوق پامال کرتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ تنازعہ کشمیر مرکزی حیثیت کا حامل ہے جس کا حل کیا جانا ناگزیر ہے، مشرقی تیمور کی طرح تنازعہ کشمیر کا حل بھی سلامتی کونسل کی قراردادوں میں پوشیدہ ہے۔

چیئرمین پی ٹی آئی کا کہنا تھاکہ پاکستان میں کوئی عسکری یا سویلین رہنما امن اور بھارت سے بہتر تعلقات کا مخالف نہیں، مسئلہ کشمیر پاک بھارت تعلقات کی نوعیت کا تعین کرتا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ نواز شریف نے اہل کشمیر کی حق خودارادیت کی تحریک کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا، انہوں نے مودی کی تقریب حلف برداری میں شرکت کے موقع پر حریت قیادت سے ملاقات تک نہ کی، نواز شریف نے حریت قیادت سے ملاقات کرکے اہل کشمیر کی آواز بننے کی بجائے اپنے کاروبار کو فوقیت دی، انہوں نے اپنے کاروباری مفادات کو مسئلہ کشمیر اور قومی مفاد دونوں پر ترجیح دی۔

ان کا کہنا تھا کہ کشمیر کمیٹی ہر لحاظ سے ناکامی کا استعارہ ہے، حکومت کے ہاں کشمیر پر کوئی واضح حکمت عملی موجود نہیں، کشمیر کمیٹی کے مولانا کی ساکھ ایسی ہے کہ یورپ کے کئے ممالک انہیں ویزہ تک نہیں دیتے جب کہ قومی اسمبلی کے اسپیکر کشمیر کمیٹی پر اٹھنے والے اخراجات قوم کے سامنے رکھنے کو تیار نہیں۔

عمران خان نے کہا کہ تحریک انصاف کشمیر کے حوالے سے مکمل سوچ رکھتی ہے، اقتدار میں آئے تو کشمیر پر جامع، متحرک اور مؤثر پالیسی بنائیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پرویزمشرف نے کشمیرکے معاملے کو شدید نقصان پہنچایا، انہوں نے کشمیر پر قراردادوں کو پرانی قرار دے کر نقصان پہنچایا، کشمیر پراقوام متحدہ کی قراردادیں معاملے میں مرکزی حیثیت رکھتی ہیں، یہ قراردادیں کشمیریوں کےحق خودارادی کی قانونی حیثیت کومضبوط کرتی ہیں۔

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*