بنیادی صفحہ / اہم خبریں / ’’میں نے نماز کی امامت کرنے کا فیصلہ کیا کیونکہ ۔

’’میں نے نماز کی امامت کرنے کا فیصلہ کیا کیونکہ ۔

بھارت میں ایک لڑکی امام مسجد بن گئی اور اپنے امام بننے کی ایسی وجہ بیان کر دی ہے کہ کوئی مسلمان سوچ بھی نہ سکتا تھا۔ ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق یہ واقعہ بھارتی ریاست کیرالہ کے شہر ملپورم میں پیش آیا جہاں جمیدا نامی لڑکی نے گزشتہ جمعہ المبارک کی نماز پڑھائی اوردرجنوں مردوں نے اس کی امامت میں نماز پڑھی۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جمیدا کا کہنا تھا کہ ’’اسلام میں کہیں نہیں کہا گیا کہ صرف مرد ہی امام بن سکتا ہے۔ یہ روایت مرد ائمہ کرام نے مسلط کی ہے۔ میں اس روایت کو توڑنا چاہتی تھی جس کی وجہ سے میں نے امام بننے کا فیصلہ کیا۔‘‘
رپورٹ کے مطابق جمیدا قرآن سنت سوسائٹی کی ریاستی جنرل سیکرٹری بھی ہے۔یہ سوسائٹی ایسے لوگوں پر مشتمل ہے جن کا عقیدہ ہے کہ اسلام میں صرف قرآن مجید ہی اہم ہے، احادیث کی کتابیں کوئی اہمیت نہیں رکھتی۔جمیدا اسی تنظیم کے ہیڈآفس میں ہی نماز جمعہ کی امامت کرائی۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اس کی امامت میں نماز پڑھنے والے صرف مرد تھے، ان میں کوئی ایک خاتون بھی شامل نہیں تھی۔رپورٹ کے مطابق جمیدا کے اس اقدام پر بھارت کے مسلمانوں میں شدید غصے کی لہر پھیل گئی اور وہ اسے اسلام مخالف قوتوں کی سازش قرار دے رہے ہیں۔سُنی یووجنا سنگھم کے ریاستی جنرل سیکرٹری عبدالحمید فیضی کا کہنا تھا کہ ’’خاتون خواتین کی امامت تو کرا سکتی ہے لیکن کسی خاتون کے مردوں کی امامت کرانے کی اسلام میں کوئی روایت موجود نہیں ہے۔اسلام مردو خواتین کے ایسے اختلاط کی سختی سے ممانعت کرتا ہے۔‘‘

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*