بنیادی صفحہ / اہم خبریں / پولیس مقابلے میں ہلاک نقیب محسود بے گناہ ،

پولیس مقابلے میں ہلاک نقیب محسود بے گناہ ،

تحقیقاتی کمیٹی نے راوانوار کے دعووں کی قلعی کھولتے ہوئے انکشاف کیا ہے کہ جس نقیب اللہ کا تعلق کالعدم تنظیم سے ہے وہ کوئی اور ہے۔
نقیب اللہ کی ہلاکت کے معاملے پر پولیس کی تین رکنی تحقیقاتی کمیٹی نقیب اللہ کو بے گناہ قرار دے چکی ہے جب کہ کمیٹی نے راو¿ انوار کو معطل کرکے گرفتار کرنے اور نام ای سی ایل میں ڈالنے کی بھی سفارش کی جس پر انہیں عہدے سے ہٹا کر نام ای سی ایل میں ڈال دیا گیا ہے۔
سابق ایس ایس پی ملیر راو¿ نے بتایا تھا کہ نقیب اللہ کا تعلق کالعدم تنظیم سے تھا اور وہ مہران بیس حملے میں ملوث تھا۔ذرائع کے مطابق تحقیقاتی کمیٹی کا کہنا ہے کہ جس نقیب اللہ پر مقدمات درج ہیں اور اس کا تعلق کالعدم تنظیم سے ہے وہ کوئی اورہے، اس کا والد اور بھائی بھی مقابلے میں مارے جاچکے ہیں۔ذرائع نے بتایا کہ نقیب اللہ نامی ملزم کالعدم تنظیموں کے لیے اغوا برائے تاوان کرتا رہا ہے اور اس نقیب اللہ کے کیس میں اس نوجوان کو ڈالنے کی کوشش کی گئی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ نقیب کے اہل خانہ کی جانب سے مقدمہ درج کرانے کا انتظار ہے، اگر اس کے اہل خانہ نے مقدمہ درج نہ کرایا تو پھر سرکار کی مدعیت میں مقدمہ درج کیا جائے گا۔

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*