بنیادی صفحہ / اہم خبریں / یورپی ملک سعودی لڑکیوں کو اب کیا کام کرنا سکھائے گا؟

یورپی ملک سعودی لڑکیوں کو اب کیا کام کرنا سکھائے گا؟

دو سال قبل شروع ہونے والے اقتصادی بحران سے نمٹنے کے لئے سعودی عرب میں متعدد ایسی سماجی و معاشی تبدیلیوں کا آغاز ہوا جن کا پہلے کبھی تصور بھی نہیں کیا جا سکتا تھا۔ خواتین کو کاروبار اور ملازمت کی جانب مائل کرنے کی کوششیں بھی ایک ایسا ہی اقدام ہے، جسے سعودی مردوں کی اکثریت تو اب بھی قبول کرنے کو تیار نہیں لیکن حکومت اس معاملے میں بہت سنجیدہ ہو چکی ہے۔ اس سنجیدگی کا اندازہ اس بات سے کیا جا سکتا ہے کہ سعودی عرب نے خواتین کی کاروباری تربیت کے لئے یورپی ملک سویڈن کی مدد بھی حاصل کرلی ہے۔ ’شی لیڈز‘ کے نام سے ایک خصوصی تعلیمی و تربیتی پروگرام کا آغاز کردیا گیا ہے جس کے تحت خواتین کاروباری شخصیات کی تربیت دونوں ممالک میں کی جائے گی۔

ویب سائٹ ’گلف بزنس‘ کے مطابق اس تربیتی پروگرام کے تحت باہمی ملاقاتوں کے ذریعے تعلیم و تربیت کے نیٹ ورک قائم کئے جائیں گے، تعلیمی دوروں کا آغاز کیا جائے گا، نامور کاروباری شخصیات سے زیر تربیت خواتین کی ملاقاتیں کروائی جائیں گی اور بڑے کاروباری اداروں کے طریقہ کار کے متعلق زیر تربیت خواتین کو آگاہ کیا جائے گا۔
تربیتی پروگرام کے پہلے ماڈیول کا آغاز سویڈن میں کیا گیا جس میں 18سعودی خواتین نے حصہ لیا۔ اگلی تربیتی نشست کا آغاز مارچ 2018ءمیں سعودی دارالحکومت میں ہوگا۔ افتتاحی نشست میں سعودی خواتین نے نا صرف ٹریننگ سیشنز میں شرکت کی بلکہ عالمی شہرت یافتہ کاروباری اداروں کے دورے بھی کئے۔ ان اداروں میں سویڈش انسٹیٹیوٹ، ایرکسن، ایٹلس کاپکو، آل برائٹ اور ایڈ جینڈر جیسے اداروں کے نام شامل ہیں۔

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*