بنیادی صفحہ / اہم خبریں / وہ گائوں جہاں دوسری شادی بے حد ضروری ہے؟ لرزہ خیزانکشاف

وہ گائوں جہاں دوسری شادی بے حد ضروری ہے؟ لرزہ خیزانکشاف

راجستھان کے بارمیڑ ضلع میں ایک ایسا گاوں ہے جہاں خاندان میں دوسری بیوی سے اولاد پیدا ہوتی ہے ۔ یہ گائوں ضلع سےتقریباً 28کلومیٹرکی دوری پر ہے ۔ اس گائوں کی آبادی 70 مسلم خاندانوں پر مشتمل ہے ۔ گائوں میں ہر شخص نے دو ،دو شادی کی ہوئی ہیں ۔ دوسری شادی کا رواج مسلمانوں میں عجیب بات نہیں لیکن اس دوسری شادی کی دلچسپ وجہ نے لوگوں کو حیرت میں ڈال رکھا ہے ۔ اس گائوں کی دلچسپ بات یہ ہے کہ یہاں کسی بھی مرد کی اولاد پہلی بیوی سے نہیں ہوتی .

اس کیلئے اسے دوسری شادی کرنی پڑتی ہے ۔ حیران کن بات یہ ہے کہ اس گائوں میں کسی بھی مرد کی پہلی بیوی سے کوئی اولاد نہیں ہوئی جبکہ دوسری سے شادی کے بعد ہر ایک کو اولاد کی نعمت حاصل ہوئی ۔ گاوں کے کئی لوگوں نے تو آدھی عمر گذر جانے کے بعد اولاد کی چاہت میں دوسرانکا ح کیا اور ان کے یہاں بچے پیدا بھی ہوئے۔گائوں کے 65سالہ ایک بزرگ آرب خان نے بتایا ہے کہ گائوں کیساتھ یہ اتفاق کئی اسباب کی بدولت جڑا ہوا ہے ۔ انہوں نے بتایا ہے گاوں کے لیلا میٹھا کے گھر کئی سال تک اولاد نہیں ہوئی ۔گھر والوں نے جب دوسرے نکاح کیلئے زور ڈالا تو اس نے صاف انکار کر دیا ۔ اس کی بیوی تقریباً 55سال کی عمر میں وفات پا گئی ۔ اس کے بعد گھر والوں نےد وسری شادی کیلئے ایک بار پھر زور دیا جس کیلئے اس نے رضا مندی ظاہر کر دی ۔

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*