بنیادی صفحہ / اہم خبریں / جہازعملہ خاتون کوجنسی ہراساں کرنے والےکی خدمت کرتارہا

جہازعملہ خاتون کوجنسی ہراساں کرنے والےکی خدمت کرتارہا

سوشل ویب سائٹ فیس بک کے بانی مارک زکربرگ کی بہن رینڈی زکر برگ نے الزام عائد کیا ہے کہ دوران پرواز جس شخص نے انہیں جنسی طور پر ہراساں کیا اور متعدد خواتین کے لیے نازیبا جملے کہے، جہاز عملہ اس کی خدمت کرتا رہا۔

خیال رہے کہ مارک زکر برگ کی 35 سالہ بہن رینڈی زکربرگ ماضی میں فیس بک ٹیم کا بھی حصہ رہ چکی ہیں، اب وہ زکربرگ میڈیا گروپ کی سربراہ ہونے سمیت ریڈیو پروگرام کی میزبان، لکھاری و کاروباری خاتون ہیں۔

رینڈی زکربرگ نے تین دن قبل الزام عائد کیا تھا کہ انہیں دوران سفر پرواز میں ایک شخص نے جنسی طور پر ہراساں کیا، جب کہ ان کی شکایت کے باوجود جہاز عملے نے اس شخص کے خلاف کارروائی کرنے کے بجائے انہیں اپنی جگہ تبدیل کرنے کی پیش کش کی۔

رینڈی زکربرگ نے 30 نومبر کو اپنی فیس بک پوسٹ میں بتایا کہ وہ امریکی ایئر لائن ’الاسکا‘ کے ذریعے ریاست کیلی فورنیا کے شہر لاس اینجلس سے میکسیکو کے شہر مزاٹلان جا رہی تھیں کہ ان کے ساتھ ناخوشگوار واقعہ پیش آیا۔

رینڈی زکربرگ لکھاری بھی ہیں—فوٹو: فیس بک
رینڈی زکربرگ لکھاری بھی ہیں—فوٹو: فیس بک
اپنی پوسٹ میں رینڈی زکربرگ نے بتایا کہ جیسے ہی وہ فرسٹ کلاس میں بیٹھیں تو ان کے پیچھے بیٹھے شخص نے ان کے خلاف نازیبا جملے کہنا شروع کیے، یہاں تک اس نے ان کی سہیلیوں سے متعلق بھی نازیبا الفاظ کہنا شروع کیے۔

یہ بھی پڑھیں: ’جنسی ہراساں کرنے والوں کو شرمندہ کرنا چاہیے‘
رینڈی زکربرگ نے ایئرلائن انتظامیہ کو مخاطب ہوتے ہوئے لکھا کہ جب اس شخص کے جملے اور الفاظ ناقابل برداشت ہوگئے تو انہوں نے اپنی سہیلیوں کے ساتھ مل کر جہاز عملے کو اس کی شکایت کی۔

رینڈی زکربرگ اداکاری بھی کرتی ہیں—فوٹو: فیس بک
رینڈی زکربرگ اداکاری بھی کرتی ہیں—فوٹو: فیس بک
ان کے مطابق تاہم وہ یہ جان کر مزید حیران رہ گئیں کہ جہاز عملے نے ان کی حفاظت کے لیے اقدامات اٹھانے کے بجائے اس شخص کی خدمت کرنا شروع کردی، اور اس شخص سے کہا گیا کی ایسی شکایات کو دل پر نہ لیں، جب کہ رینڈی زکربرگ کو اپنی جگہ تبدیل کرنے کی پیش کش کی گئی۔

فیس بک بانی کی بہن نے بتایا کہ جہاز عملہ اس شخص کی ایسی حرکتوں سے واقف تھا، اور یہ پہلی بار نہیں ہو رہا تھا، یہ شخص اس ایئرلائن کا مستقل مسافر تھا، اور عملہ ان کے ڈالرز کے بدلے خواتین کی حفاظت بھول گیا۔

رینڈی زکربرگ نے یہ پوسٹ اپنے ٹوئٹر پر بھی شیئر کی، جسے اب تک 12 ہزار سے زائد بار ری ٹوئیٹ کیا گیا، جب کہ اسے فیس بک پر بھی سیکڑوں لوگوں نے شیئر کیا۔
جہاز عملے کے شرمناک رویے پر لوگوں نے ’الاسکا ایئرلائن‘ کو تنقید کا نشانہ بنایا، جب کہ بعد ازاں رینڈی برگ نے ہی بتایا کہ ان کی شکایت پر ایئرلائن کمپنی نے معاملے کی تحقیقات کے لیے کمیٹی قائم کردی۔

مزید پڑھیں: ’خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنا کسی ایک شعبے تک محدود نہیں‘
دوسری جانب یہ خبریں بھی سامنے آ رہی ہیں کہ اسی ایئر لائن سمیت امریکا کی متعدد ایئرلائنز میں دوران پرواز خواتین کے ساتھ نازیبا واقعات اور انہیں ہراساں کیے جانے کے واقعات پیش آتے رہے ہیں۔

نیویارک ٹائمز کی ایک رپورٹ کے مطابق امریکا کی وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف بی آئی) نے حال ہی میں دوران پرواز خواتین کو ہراساں کیے جانے کی 58 تحقیقات کیں، یہ واقعات 2015 سے 2016 کے درمیان پیش آئے۔

ایک اور رپورٹ کے مطابق امریکا میں دوران پرواز نہ صرف مسافر خواتین بلکہ جہاز عملے کی خواتین بھی مسافروں کے جھگڑے کے درمیان ہراساں کی جاتی ہیں۔

رینڈی زکربرگ ریڈیو پر پروگرام بھی کرتی ہیں—

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*