بنیادی صفحہ / اہم خبریں / اس ٹی وی چینل کی وجہ سے مصر کی مسجد میں 300 لوگوں کو شہید کیا گیا،

اس ٹی وی چینل کی وجہ سے مصر کی مسجد میں 300 لوگوں کو شہید کیا گیا،

متحدہ عرب امارات کی سکیورٹی فورسز کے ایک اعلیٰ عہدیدار نے الجزیر ٹی وی کے متعلق ایسا مطالبہ کر دیا ہے کہ سن کر پوری دنیا حیران رہ گئی۔ الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق لیفٹیننٹ جنرل ضاحی خلفان تمیم نے گزشتہ روزالجزیرہ پر انتہائی سنگین الزامات عائد کرتے ہوئے کہا کہ ”الجزیرہ نے دہشت گردوں کو مصر کی مسجد میں ہونے والے حملے کی ترغیب دی۔ یہ داعش، القاعدہ اور النصرہ فرنٹ کا ٹی وی چینل ہے اور اتحادی فوج کو چاہیے کہ دہشت گردی کی اس مشین پر بمباری کر دے۔“
’اب وہ وقت آگیا‘ وہ طاقتور ترین سعودی عہدیدار جسے پوری دنیا شدت پسند سمجھتی تھی، اچانک منظر عام پر آگیا، ایسا اعلان کردیا کہ ہر کوئی دنگ رہ گیا
ضاحی خلفان تمیم نے ایک ٹویٹ میں لکھا کہ ”کب تک الجزیرہ مصر اور عرب دنیا کی سکیورٹی کے ساتھ کھلواڑ کرتا رہے گا۔“ اس پر ردعمل دیتے ہوئے الجزیرہ عربی کے منیجنگ ڈائریکٹر یاسر ابو حلالہ کا کہنا تھا کہ ”اگر الجزیرہ یا اس کے ملازمین پر کوئی حملہ ہوتا ہے تو اب اس کی تمام تر ذمہ داری ضاحی خلفان پر عائد ہو گی۔ متحدہ عرب امارات ان کے بیان پر ردعمل دے کیونکہ وہ نہ صرف اماراتی شہری ہیں بلکہ اماراتی حکومت کے اعلیٰ عہدیدار بھی ہیں۔ وہ مصر کی مسجد میں ہونے والے خوفناک حملے پر لوگوں کے دکھ اور غم و غصے کا غلط استعمال کر رہے ہیں، جو درحقیقت دہشت گردی کی ترغیب دینے کے زمرے میں آتا ہے۔“

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*