بنیادی صفحہ / اہم خبریں / ہوائی آلودگی کن بلڈ گروپس والے افراد کیلئے خطرناک ہوتی ہے؟ جدید تحقیق

ہوائی آلودگی کن بلڈ گروپس والے افراد کیلئے خطرناک ہوتی ہے؟ جدید تحقیق

اگر کسی جگہ ہوائی آلودگی کی شرح بہت زیادہ ہو تو اے، بی یا اے بی بلڈ گروپس کے حامل افراد میں ہارٹ اٹیک یا سینے میں درد کا خطرہ او بلڈ گروپ والے افراد کے مقابلے میں بہت زیادہ ہوتا ہے۔

یہ دعویٰ امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا۔

انٹرماﺅنٹین میڈیکل سینٹر انسٹیٹوٹ کی تحقیق میں خبردار کیا گیا ہے کہ جن لوگوں کا بلڈ گروپ اے، بی یا اے بی ہے، انہیں اسموگ یا ہوائی آلودگی کی شرح بڑھنے پر چار دیواری کے اندر زیادہ وقت گزارنا چاہئے تاکہ وہ خون کی شریانوں میں پیچیدگیوں سے پیدا ہونے والے امراض کا خطرہ کم کرسکیں۔

مزید پڑھیں : بلڈ گروپ سے ہارٹ اٹیک کی پیشگوئی ممکن

یہ بات تو کافی پہلے سامنے آچکی ہے کہ ہوائی آلودگی ہارٹ اٹیک کا خطرہ بڑھاتی ہے مگر پہلی بار اس خطرے کو مخصوص بلڈ گروپس سے جوڑا گیا ہے۔

اس تحقیق کے دوران مریضوں کے چودہ سال کے ڈیٹا کا جائزہ لینے کے بعد دریافت کیا گیا کہ اگر ہوائی آلودگی کی شرح بڑھ جائے تو کن بلڈ گروپ کے مالک افراد کے ہارٹ اٹیک یا سینے میں درد کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

اس کے مقابلے میں او ٹائپ بلڈ گروپ رکھنے والے افراد میں اس خطرے کے بڑھنے کا امکان صرف 40 فیصد ہوتا ہے۔

محققین کا کہنا تھا کہ ہارٹ اٹیک اور ہوائی آلودگی کے درمیان تعلق پر مخصوص بلڈ گروپس والے افراد کو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں بلکہ انہیں اس حوالے سے شعور اجاگر کرنے کی ضرورت ہے۔

یہ بھی پڑھیں : بلڈ گروپس مختلف کیوں ہوتے ہیں؟

ان کا کہناتھا کہ اس دریافت کے بعد لوگوں پر زور دیا جانا چاہئے کہ آلودگی والے مقامات پر ایسے لوگ زیادہ سے زیادہ وقت چاردیواری کے اندر گزاریں تاکہ خطرے کو کم کرسکیں۔

تحقیق کے مطابق ہوائی آلودگی میں دس مائیکرو گرام کا اضافہ بھی اے، بی یا اے بی بلڈ گروپس والے افراد میں ہارٹ اٹیک کا خطرہ 25 فیصد تک بڑھا دیتا ہے جبکہ او گروپ والے افراد میں یہ امکان صرف دس فیصد ہوتا ہے۔

اس تحقیق کے نتائج کیلیفورنیا میں جاری امریکن ہارٹ ایسوسی ایشن سائنٹیفک کے اجلاس میں پیش کیے گئے۔

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*