بنیادی صفحہ / اہم خبریں / کیا پھلوں کے بیج کھانا نقصان دہ ہوتا ہے؟

کیا پھلوں کے بیج کھانا نقصان دہ ہوتا ہے؟

پھل صحت کے لیے فائدہ مند غذاﺅں میں سے ایک ہے جو جسمانی ضروریات پوری کرنے والے اجزاءسے بھرپور ہوتے ہیں جسسے متعدد امراض کا خطرہ کم ہوتا ہے۔

روزانہ کچھ مقدار میں پھلوں کو کھانا صحت کے لیے اتنا فائدہ ہوتا ہے کہ وہ آلودہ ماحول میں جسم کو صحت مند اور فٹ رہنے میں مدد دیتا ہے۔

مگر کیا آپ نے کبھی پھلوں کے بیجوں کے بارے میں سوچا؟ کیا وہ بھی فائدہ مند ہوتے ہیں؟

مزید پڑھیں : ایک امرود کے لاتعداد فوائد

یہ کہنے کی ضرورت نہیں کہ لگ بھگ ہر پھل کے اندر بیج موجود ہوتے ہیں جن کا جسم میں چلے جانا پودا تو انہیں اگاتا، مگر یہ جاننا بہتر ہے کہ کن پھلوں کے بیج کھانے نہیں چاہئے اور کیوں۔

کچھ بیج آپ کے لیے بہتر ہوسکتے ہیں جبکہ دیگر کھانا نقصان کا باعث بن سکتے ہیں۔

مثال کے طور پر ناشپاتی، امرود، پپیتا، تربوز وغیرہ کے بیج صحت پر مثبت اثرات مرتب کرتے ہیں جیسے کولیسٹرول لیول میں کمی، ہاضمے کے مسائل سے تحفظ، پروٹین کو ہضم ہونے میں مدد دیتا اور بلڈ پریشر ریگولیٹ کرنا وغیرہ۔

تاہم طبی ماہرین کے مطابق کچھ پھلوں کے بیج ایسے ہوتے ہیں جو آنتوں کے افعال متاثر کرسکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : سیب کھانے سے صحت کو ہونے والے 8 فوائد

جیسا آپ نے دیکھا ہوگا کہ پھلوں کے بیج کے اوپر ایک سخت اور مضبوط تہہ ہوتی ہے اور اس کی وہ بھی ہوتی ہے۔

کچھ پھل جیسے خوبانی، آلو بخارہ، آڑو اور سیب سمیت دیگر کے بیج میں زہریلا مواد جیسے سائنائڈ کی معمولی مقدار ہوتی ہے مگر یہ کینسر یا دیگر سنگین امراض کا سبب اس وقت تک نہیں بنتے جب تک ان کی بہت زیادہ مقدار نہ کھالی جائے یا طویل عرصے تک لگاتار کھایا جائے۔

طبی ماہرین کے مطابق کسی بھی پھل کے بیج کو معمولی مقدار میں کھالینا کسی نقصان کا باعث نہیں بنتا تاہم بہت زیادہ مقدار کا استعمال نقصان دہ ہوسکتا ہے۔

تو پھلوں کے بیج نگل لینے یا کھا لینے پر فکر مند مت ہوں اور پھلوں سے بغیر کسی تناﺅ کے لطف اندوز ہوں

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*