بنیادی صفحہ / اہم خبریں / افغانستان میں واٹس ایپ سروس معطل، برازیل میں پابندی عائد

افغانستان میں واٹس ایپ سروس معطل، برازیل میں پابندی عائد


افغان حکومت نے معروف میسیجنگ ایپلی کیشنز واٹس ایپ اور ٹیلی گرام کی سروس عارضی طور پر معطل کردی۔

خیال رہے کہ افغانستان میں واٹس ایپ اور ٹیلی گرام میسیجنگ سروس دیگر ایپلی کیشنز کے مقابلے بہت زیادہ مقبول ہیں۔

واٹس ایپ اور ٹیلی گرام کو افغانستان میں جہاں عام لوگ اور حکومتی عہدیدار استعمال کرتے ہیں، وہیں ان سے شدت پسند گروپ بھی فائدہ اٹھا رہے ہیں۔

اطلاعات ہیں کہ طالبان اور داعش کی جانب سے واٹس ایپ اور ٹیلی گرام کو استعمال کیے جانے کے بعد ہی افغان حکومت نے ان ایپلی کیشنز کی سروس معطل کی۔

یہ بھی پڑھیں: برازیل میں واٹس ایپ پر پابندی
غیر ملکی خبر رساں ادارے ’اے ایف پی‘ نے افغانستان کی وزارت ٹیلی کمیونی کیشن کے ترجمان نجیب نغیلائی کے حوالے سے بتایا کہ انٹرنیٹ کی سہولت فراہم کرنے والی کمپنیوں کو یکم نومبر سے 20 نومبر تک واٹس ایپ اور ٹیلی گرام کی سروس معطل کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ انٹرنیٹ سروس فراہم کرنے والا واحد حکومتی ادارہ سلام نیٹ ورک ایک نئی میسیجنگ سروس کے تجربے پر کام کر رہا ہے، جس وجہ سے واٹس ایپ اور ٹیلی گرام پرعارضی پابندی عائد کی گئی۔

دوسری جانب قائم مقام وزیر ٹیلی کمیونی کیشن و اطلاعات شہزاد اریوبی نے ایپلی کیشنز پر پابندی کا حکم دینے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ افغان حکومت اظہار رائے کی آزادی پر مکمل یقین رکھتی ہے، یہ تاثر غلط ہے کہ حکومت سوشل میڈیا پر پابندی عائد کر رہی ہے۔

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*